خالی خزانے کے باوجود اورنج لائن ٹرین سمیت کوئی منصوبہ رول بیک نہیں ہوگا :عبدالعلیم خان

  • بھکی سمیت بجلی کے منصوبے سفید ہاتھی ہیں ، مستقل سبسڈی خزانے پر ظلم اور بوجھ ہے نیا بلدیاتی نظام گراس روٹ لیول پر حالات بدلے گا ، نمائندے با اختیار لیکن جوابدہ ہونگے
    شہباز شریف کے پیروکار نہیں کہ سابقہ پراجیکٹ بند کردیں ،عالمی نشریاتی ادارے کو انٹر ویو

پنجاب حکومت کے سینئر وزیر اور تحریک انصاف کے صوبائی صدر عبدالعلیم خان نے کہا ہے کہ اورنج لائن ٹرین سمیت کسی منصوبے کو رول بیک نہیں کیا جائے گا ،اپنے وسائل میں رہتے ہوئے نیک نیتی کے ساتھ کوشش کرینگے کہ حالات کا بہتر سے بہتر حل نکالا جائے ،انہوں نے کہا کہ خزانہ خالی ہے سابقہ حکومت اوور پیمنٹ کر گئی ہے اور اگر موجودہ حکومت آئندہ 4سال کوئی ایک بھی نیا منصوبہ نہ شروع کرے تو پھر بھی جاری منصوبوں کی تکمیل انتہائی مشکل مرحلہ ہوگا ۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے عالمی نشریاتی ادارے (بی بی سی) سے انٹرویو میں گفتگو کرتے ہوئے کیا ،عبدالعلیم خان نے کہا کہ ہم شہباز شریف کے پیروکار نہیں کہ سابقہ حکومت کے منصوبوں کو صرف اس لیے بند کر دیں کہ اُن پر ہماری تختی نہیں لگی ،انہوں نے کہا کہ خزانہ خالی ہے ،نواز لیگ کی حکومت نے پنجاب میں بھی لوٹ مار کی انتہا کر دی اور میگا منصوبوں کے نام پر کروڑوں نہیں بلکہ اربوں روپے کی دیہاڑیاں لگائی گئیں اور ہر منصوبے میں بھاری مال کھایا گیا ، سینئر وزیر عبدالعلیم خان کا کہنا تھا کہ کرپشن کے باوجود یہ پیسہ عوام کے ٹیکسوں کی آمدن سے خر چ کیا گیا جس کو پایہ تکمیل تک پہنچانا اپنا فرض سمجھتے ہیں ، عبدالعلیم خان نے کہا کہ کسی بھی منصوبے پر مستقل طور پر سبسڈی دینا نا ممکن ہے اور یہ قومی خزانے پر ظلم اور بہت بڑا بوجھ ہے جس کی کوئی بھی حکومت متحمل نہیں ہو سکتی ، انہوں نے کہا کہ بھکی سمیت بجلی کے تمام منصوبے سفید ہاتھی ہیں جن کی لاگت میں دانستہ طور پر نا قابل یقین حد تک اضافہ کیا گیا تاکہ اپنی جیبیں بھری جا سکیں ، عبدالعلیم خان نے مزید کہا کہ عوام کی ترجیحات تعلیم ،صحت اور پینے کا صاف پانی تھا جسے ماضی میں مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا ابھی صاف پانی منصوبے میں مزید ہوش ربا حقائق سامنے آنے والے ہیں
سینئر وزیر عبدالعلیم خان نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ نیا بلدیاتی نظام گراس روٹ لیول پر صوبے کی حالت بدلے گا اور عوام کے ترقیاتی مسائل مقامی سطح پر ہی حل ہونگے ، انہوں نے کہا کہ بلدیاتی نمائندوں کومالی و انتظامی لحاظ سے با اختیار بنانے کے ساتھ ساتھ انہیں مادرپدر آزاد نہیں چھوڑا جائے گا اور اُن پر باقاعدہ چیک اینڈ بیلنس کا ایسا نظام ہوگا جس میں آڈٹ کی 10بڑی کمپنیوں کو اختیار ات سونپے جائیں گے ،عبدالعلیم خان نے کہا کہ پہلی مرتبہ بلدیاتی نمائندوں کو ایسے اختیارات دینے جا رہے ہیں جن کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی ، ایک اور سوال کے جواب میں عبدالعلیم خان کا کہناتھا کہ ملک بھر کی نظریں پنجاب پر ہیں اور انشاء اللہ عمران خان کی ٹیم اُن کی توقعات پر پورا اترے گی اور صوبے میں 100دن کے پلان کیلئے عملی نتائج سامنے لائیں گے ،انہوں نے کہا کہ مجھے قیادت کی طرف سے جو بھی ذمہ داریاں سونپی جا رہی ہیں اُن سے عہدہ بر آ ہونے کیلئے پوری لگن اور ہمت کے ساتھ کام ہو رہا ہے انشاء اللہ پنجاب ہر شعبے میں سبقت لے گا اور تبدیلی کے سفر میں زیادہ سے زیادہ کامیابیاں حاصل کرینگے اور عوام کی توقعات کو ہر حال میں پورا کیا جائے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.