11

ایران و امریکہ عقل و فہم کا دامن ہاتھ سے مت چھوڑیں ، قدیر صدیقی

دبئی (نمائندہ خصوصی)پاکستان عالمی امن کا داعی ہے ،وہ کسی طرح بھی دوسروں کی جنگ کا حصہ نہیں بنے گا، یہ بات سی ای او البرکہ گروپ آف کمپنیز قدیر صدیقی نے اپنے ایک بےان مےں کہی ، انہوں نے کہا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر کا بیان خوش آئند ہے کہ ’ہم اپنی سرزمین کسی کے خلاف استعمال ہونے کی اجازت نہیں دیں گے اور ہر وہ کام کریں گے جو خطے کو امن کی طرف لے کر جائے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کہہ چکے ہیں کہ ’پاکستان کسی کا فریق نہیں بنے گا لیکن صرف امن کا شراکت دار بنے گا۔ پاکستان نے ہر وہ کام کیا جو خطے میں امن لاسکتا تھا، ہم نے اپنے ملک میں دہشت گردی کو ناکام کیا، پاک افغان سرحد کو محفوظ کیا پھر افغان مصالحتی عمل میں ایک بھرپور مثبت کردار ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت کے خلاف ان کی اشتعال انگیزیوں کے باوجود ایک ذمہ دار ریاست اور قابل افواج ہونے کا ثبوت دیا تو ان حالات میں خطے کے کسی بھی ملک کے حوالے سے کوئی بھی کشیدگی کو ہم خطے میں امن کی کوششوں کے خلاف سمجھتے ہیں۔ ’خطہ بہت خراب حالات سے بہتری کی طرف جا رہا ہے، اس بہتری کے لیے افغان مصالحتی عمل کا کامیاب ہونا بہت ضروری ہے اور اس میں پاکستان اپنا بھرپور مثبت کردار ادا کر رہا ہے اور پاکستان کی خواہش ہے کہ اس پر توجہ مرکوز رہے جبکہ یہ امن کی جانب لے کر جائے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کا یہ کہنا بھی خوش آئند ہے کہ ’کوئی بھی ایسا عمل جو افغان مصالحتی عمل کو خراب کرے ہمیں اس سے اجتناب کرنا چاہیے۔ ’خطے کے مختلف ممالک میں کشیدگی کم ہونی چاہیے اور اس سلسلے میں تمام متعلقہ ممالک کو تعمیری طرزِ عمل اور مذاکرات سے آگے بڑھنا چاہیے، پاکستان اس سلسلے میں تمام ترپُرامن کوششوں کی تائید کرے گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں